81

ساہیوال انسداد دہشت گردی عدالت نے سوشل میڈیا پر مذہبی منافرت پھیلانے پر ملزم کو سزائے موت ، 22 سال قید سخت اور دس لاکھ روپے جرمانہ کی سزا سنا دی

ساہیوال اسپیشل جج انسداد دہشت گردی عدالت ساہیوال ضیاء اللہ خاں نے سوشل میڈیا پر مذہبی منافرت پھیلانے پر احسان شان کو سزائے موت ، 22 سال قید سخت اور دس لاکھ روپے جرمانہ کی سزا سنائی ۔ عدم ادائیگی جرمانہ پر مجرم کو مزید ایک سال قیدسخت کی سزا بھگتنا ہو گئی۔

ساہیوال ۔عدالت نے مجرم احسان شان کو 295 سی میں سزائے موت، 5 لاکھ جرمانہ 295 اے میں دس سال قید سخت ، 11 ای میں7 سال قید سخت ،

7 انسداد دہشت گردی ایکٹ میں 5 سال قید سخت اور پانچ لاکھ روپے جرمانہ کی سزائیں دیں۔

استغاثہ کے مطابق 19 اگست 2023 کو ملزم احسان شان نے جڑانوالہ واقعہ کو بنیاد بنا کر مسلمانوں کے جذبات مجروح کرنے اور مذہبی منافرت پھیلانے کا مواد اپ لوڈ کر کے سوشل میڈیا پر وائرل کر دیا۔

جس پر پولیس تھانہ ڈیرہ رحیم کے سب انسپکٹر چوہدری عامر فاروق گجر نے چھا پہ مار کر ملزم احسان شان کو چک 138 نو ایل پل سے گرفتار کر لیا اور مواد ، میٹریل موبائل سمیت قبضہ میں لے لیا۔

ساہیوال تھانہ ڈیرہ رحیم پولیس نے مقدمہ الیکٹرونک کرائم ایکٹ کی دفعہ 11 ای، 295 اے ، 295 بیت پ اور 7 انسداد دہشت گردی ایکٹ درج کر لیا تھا،ملزم کو سنٹرل جیل ساہیوال بھیج دیا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں